دس عنوان جو حال ہی میں ثبت ہوئے ہیں :

حضرت علی اکبرؑ[ترمیم]

[جاری رکھیں]
حضرت علی اکبرؑ (۳۳تا۶۱ھ)، امام حسینؑ کے عزیز ترین فرزند ہیں۔ تاریخی کتب کی رو سے آپ عاشور کے دن بنی ہاشم کے پہلے شہید اور شکل و شمائل میں پیغمبر اکرمؐ کے سب سے زیادہ مشابہہ تھے۔ حضرت علی اکبرؑ کے بدترین دشمن بھی آپ کے حسب نسب، حسن و جمال اور شجاعت و لیاقت کے معترف تھے۔ یہاں تک کہ معاویہ بن ابی سفیان نے بھی خلافت کیلئے آپ کو امت کا شائستہ ترین فرد قرار دیا تھا۔ حضرت علی اکبرؑ کو میدان کربلا میں دشمن کی طرف سے امان نامہ بھیجا گیا مگر آپ نے یہ کہہ کر ٹھکرا دیا کہ ابو سفیان سے قرابت تمہارے نزدیک قابل احترام ہے مگر تمہیں رسولؐ اللہ

 


قاعدہ الجمع مھما أمکن أولی من الطرح[ترمیم]

[جاری رکھیں]
قاعدہ الجمع مھما أمکن أولی من الطرح سے مراد دو متعارض دلیلوں کے مابین امکان کی صورت میں لازمی طور پر جمعِ دلالی کرنا ہے۔

 


معیار تعارض[ترمیم]

[جاری رکھیں]
معیارِ تعارض سے مراد مرحلہِ جعل و تشریع میں دو دلیلوں کے درمیان تنافی و ٹکراؤ کا ہونا ہے۔

 


قواعد جمع عرفی[ترمیم]

[جاری رکھیں]
قواعدِ جمع عرفی سے مراد وہ قواعد ہیں جو دو دلیلوں کے مدلول کے درمیان ظاہری تعارض کو دور کرنے کے لیے استعمال کیے جاتے ہیں۔

 


مطلق اور مقید میں تعارض[ترمیم]

[جاری رکھیں]
مطلق و مقید میں تعارض میں سے مراد دلیلِ مطلق کے مدلول کا دلیلِ مقید کے مدلول سے ٹکرانا اور منافات رکھنا ہے۔

 


نص اور ظاہر میں تعارض[ترمیم]

[جاری رکھیں]
دلیلِ نص اور دلیل ظاہر کے مدلول کے درمیان ٹکراؤ اور تنافی کو تعارضِ نص و ظاہر کہتے ہیں۔

 


تعارض مرجحات[ترمیم]

[جاری رکھیں]
تعارضِ مرجحات دو یا چند متعارض اخبار میں دو یا چند مرجّحات کے باہمی ٹکراؤ و تنافی کو کہتے ہیں۔

 


تعارض بدوی[ترمیم]

[جاری رکھیں]
تعارضِ بدوی سے مراد وہ تعارض ہے جو جمع عرفی کے طریق سے قابل رفع ہو اور ختم ہو جاتا ہو۔

 


اخبار تعارض[ترمیم]

[جاری رکھیں]
اخبارِ تعارض ان احادیث کو کہا جاتا ہےجو متعارض اخبار کے حکم کو بیان کرتی ہیں۔

 


احکام تعارض[ترمیم]

[جاری رکھیں]
وہ احکام جو دو یا چند دلیلوں کے درمیان تعارض کی صورت میں جاری ہوتے ہیں احکامِ تعارض کہلاتے ہیں۔

 






جعبه ابزار